ایک تحقیق کے مطابق، میوزک اور کرکٹ ایسے دو پلیٹ فارم ہیں جہاں پاکستانی نوجوانوں کو کھل کر اظہار کرنے کا موقع ملتا ہے ۔ مختصر یہ کہ جذبات سے بھرپور یہ دو ایسے مقامات ہیں جہاں نوجوانوں کی سب سے زیادہ دلچسپی ہے۔ اس بنیاد پر کوک برانڈ نے اس چیلنج کو قبول کرنے کا فیصلہ کیا اور نوجوانوں کے ساتھ اس طرح رابطے قائم کئے جو اس سے پہلے کبھی قائم نہ ہوئے تھے۔ اسی لئے 2008 میں پاکستان میں کوک اسٹوڈیو کا آئیڈیا متعارف ہوا۔ یہ ایک بہترین راستہ ہے جس کے ذریعے نہ صرف نوجوانوں کے ساتھ دائمی قربت لائی گئی بلکہ پاکستان کی میوزک انڈسٹری  میں بھی بہترین تبدیلی آگئی۔

 

آج یہ موسیقی کا شوق رکھنے والے تمام خواہشمندوں کا مرکز بن گیا ہے اور دنیا بھر میں تمام پاکستانیوں کے لئے باعث فخر ہوگیا ہے۔ پچھلے آٹھ سیزنوں میں انتہائی کامیابی کے ساتھ کوک اسٹوڈیو نے سرحدوں کے دوسری طرف بھی بدستور عوام کے دل موہ لئے ہوئے ہیں۔

 

ان میں سب سے زیادہ مقبول تاجدار حرم ہوئی ہے جو عاطف اسلم نے صابری برادران سے عقیدت میں سیزن 8 میں پڑھی۔ اپنے آغاز کے بعد ایک سال سے بھی کم وقت میں یہ یوٹیوب پر کوک اسٹوڈیو کی سب سے بڑی ریکارڈنگ ہے۔ مقامی طور پر 25.1 ملین بار دیکھے جانے کے ساتھ تاجدار حرم نے سیزن 3 میں عارف لوہار اور میشا شفیع کی پڑھی جانے والی جگنی کا بھی ریکارڈ توڑ دیا جو 24.9 ملین بار دیکھی گئی تھی۔ اس سے نہ صرف یہ ظاہر ہوتا ہے کہ کوک اسٹوڈیو کے شائقین اپنی پسندیدہ پرفارمنس کے حوالے سے بدستور انتہائی دلچسپی رکھتے ہیں بلکہ یہ اس بات کا بھی ثبوت ہے کہ کوک اسٹوڈیو بدستور قوم کا پسندیدہ میوزک پلیٹ فارم ہے جو پاکستان کے اندرونی مسائل کے باوجود امید اور توانائی کے بنیادی احساس پر مشتمل ہے۔

 

کوکا۔کولا پاکستان و افغانستان کے جنرل مینجر رضوان یو خان نے بتایا، "گزشتہ سات سالوں میں کوک اسٹوڈیو نے پاکستان کی موسیقی کے منظرنامے میں ناقابل تردید مثبت نقش ڈالے ہیں۔ بطور کوکا۔کولا ہم نئی اور متحرک جدتوں کی نمایاں انداز سے قیادت کرنے پر فخر کرتے ہیں اور ہم اعتماد کے ساتھ یہ کہہ سکتے ہیں کہ کوک اسٹوڈیو بھی بالکل ایسا ہی ہے۔

 

کوک اسٹوڈیو پاکستان کے سماجی ایجنڈے کی جانب ناقابل یقین انداز سے تعاون کررہا ہے اور برانڈ کا بدستور وعدہ ہے کہ کوک اسٹوڈیو کے ہر نئے سیزن کے ساتھ بہتر کارکردگی فراہم کی جائے گی۔